Tenses

Present perfect tense in urdu with examples

 

:پہچان

اردو کے ایسے فقرے جن کے آخر پر چکا ہوں، چکی ہوں، چکے ہیں، لیا ہے، یا گیا ہے جیسے الفاظ آتے ہوں۔ ان کو فعل حال مکمل کہا جاتا ہے۔ نیچے دی گئی مثالوں سے سمجھیں۔

:امدادی فعل

He, She, It, Single name…..Has

I, We, You, They, Plural……Have

:فعل/Verb

اس میں فعل کی ہمیشہ تیسری فارم استعمال ہوتی ہے۔

کیا احسن برداشت کر چکا ہے ؟
Has Ahsan borne?

ثاقب صرف بنک لوٹ چکا ہے۔
Saqab has looted the bank only.

کیا سب لوگ ہجیرہ اکٹھے ہو چکے ہیں ؟
Have all the people gathered in Hajira ?

کیا رشید ہمیں تنگ کر گیا ہے ؟
Has Rasheed teased us ?

لڑکا جوتے نہیں لے چکا ہے۔
The boy has not taken the shoes.

اویس حصے جوڑ چکا ہے۔
Awais has assembled the parts.

خاوند اپنی بیوی کو مار گیا ہے۔
The husband has beaten his wife.

ضیا بہانے نہیں بنا چکا ہے۔
Zia has not made excuses.

ہم نے کالج کے خلاف احتجاج نہیں کیا ہے۔
We have not protested against college.

فوج چکر لگا گئی ہے۔
The army have marched.

مصنف آزاد نہیں گھوم چکا ہے۔
The author has not wandered independent.

ماریہ دوستوں سے سیکھ نہیں گئی ہے۔
Maria has not learnt from friends.

مریم بہت زیادہ سوچ گئی ہے۔
Mariam has over thought.

استاد ڈھیروں مثالیں دے چکا ہے۔
The teacher has given many examples.

کیا حامد پڑھائی کر چکا ہے ؟
Has Hamad studied ?

وہ تیز نہیں بھاگ چکی ہے۔
He has not run fast.

اسلم خبر سن چکا ہے۔
Aslam has listened the news.

کلرک نماز نہیں پڑھ چکے ہیں۔
The clerks have not offered their prayers.

استاد ہاکی کھیل چکے ہیں۔
Teachers have payed hockey.

وہ نقل کر گیا ہے۔
He has imitated.

 

کیا آنسوں سب کچھ بتا چکے ہیں ؟
Have the tears told everything ?

سائنس نئی ایجادات کر چکی ہے۔
Science has invented new things.

کیا وہ معاملہ کا مشاہدہ کر گیا ہیں ؟
Has he observed the matter ?

میں آم نہیں کھا چکا ہوں۔
I have not eaten mango.

کیا ہم کرکٹ کھیل چکے ہیں ؟
Have we played cricket ?

عامر چائے نہیں پی چکا ہے۔
Amir has not taken tea.

دکاندار موبائل نہیں چرا چکا ہے۔
The shopkeeper has not stolen the mobile phone.

اظہر درخت کاٹ گیا ہے۔
Azhar has cutt the tree.

اسلم مجھے نہیں سن چکا ہے۔
Aslam has not listened to me.

نعمان پانی بھر چکا ہے۔
Nouman has poured the water.

کیا سائمہ کپڑے دھو چکی ہے؟
Has Saima washed the clothes ?

مریض چینخ نہیں چکا ہے۔
The patient has not cried.

پرنسپل انگلش نہیں سیکھ چکے ہیں۔
The principals have not learned English.

ہم بہت زیادہ سوچ چکے ہیں۔
We have thought very much.

کیا پیسہ سب کچھ بدل چکا ہے ؟
Has the money changed everything ?

نمرہ اپنا خون نہیں دے چکی ہے۔
Nimra has not given her blood.

انسان کائنات کو چانچ چکا ہے۔
The human being has explored the univers.

سلیم گاڑی نہیں چلا چکا ہے۔
Saleem has not driven the car.

قحط قوم کو مار گیا ہے۔
Famine has killed the nation.

وائرس ہر طرف پھیل چکا ہے۔
Virus has spread everywhere.

کیا نرس محنت کر چکی ہے؟
Has the nurse hard worked ?
Click to read present indefinite tense

 

کیا بیکٹیریا خوراک گندی کر چکے ہیں۔
Have the bacteria contaminated the food ?
کیا زخم بھر گیا ہے؟
Has the wound healed ?

مجرم دو گناہ کر گیا ہے۔
The criminal has committed two sins.

خدا ہر کسی کو معاف کر چکا ہے۔
God has forgiven everyone.

شہزاد اچھی غذا نہیں کھا چکا ہے۔
Shahzad has not eaten good diet.

شازیہ تلاوت کر چکی ہے۔
Shazia has recited.

کیا زوخہ لیکچر دے چکی ہے؟
Has Zoha delivered the lecture ?

اس کا بھائی مشکل حل کر گیا ہے۔
His brother hs solved the problem.

نوعمر بچہ انگلش سیکھ چکا ہے۔
The juvenile child has learned English.

کیا عابدہ بھاگ گئی ہے ؟
Has Abida run ?

نازیہ اونچا بول گئی ہے۔
Nazia has spoken loudly.

وہ کپڑے فروخت کر چکا ہے۔
He has sold the clothes.

پینٹر پینٹ کر چکا ہے۔
The painter has painted.

کیا لڑکے بازار چلے گئے ہیں؟
Have the boys gone to bazar ?

لوگ اپنی تجویز دے چکے ہیں۔
People have given their suggestions.

کیا امام دعا مانگ چکا ہے ؟
Has the Imam prayed ?

وہ لڑکی کو ڈانٹ گئی ہے۔
He has scolded the girls.

لڑکا بکریاں چرا چکا ہے۔
The boy has herded the goats.

اسلم خبر سن چکا ہے۔
Aslam has listened the news.

وسیم کھیل گیا ہے۔
Waseem has played.
Click to read present continuous tense
کرن نے مان نہیں لیا ہے۔
Kiran has not acceded.

لڑکے پودے کو پانی دے چکے ہیں۔
The boys have waterd the plants.

لوگ مل جل کر کام کر چکے ہیں۔
People have worked together.

یوسف نے پیسے کما لئے ہیں۔
Yousaf has earned money.

کیا ماریہ کپڑے سی چکی ہے ؟
Has Maria sewed the clothes ?

میں آم نہیں کھا چکا ہوں۔
I have not eaten mango.

وہ کپڑے دھو چکی ہے۔
She has washed the clothes.

کیا سست مزدور بچ گے ہیں ؟
Have the lazy labourers saved.

موسیقی عادل کو بدل گیا ہے۔
The music has changed Adil.

ہجوم سڑک پر دنگا کر چکا ہے۔
The crowd have rioted on the road.

امریکہ نے جہاز تیار کر لیے ہیں۔
America have made the ships.

ہم آم نہیں کھا چکے ہیں۔
We have not eaten mango.

اس کا دادا غصہ نہیں کر چکا ہے۔
His grandfather has not frustrated.

حمزہ میری مدد نہیں کر چکا ہے۔
Hamza has not helped me.

ہم دروازہ نہیں توڑ چکے ہیں۔
We have not broken the door.

امان ایت کی تشریح کر چکا ہے۔
Amaan has interpreted the verse.

جاہل مجھے سمجھ گیا ہے۔
The ignorant has understood me.

میرے دوست غلط سمجھ گے ہیں۔
My friends have understood wrongly.

 

سرجن ہمیں تسلی دے چکا ہے۔
The surgeon has consoled us.

مہنگائی بڑھ نہیں چکی ہے۔
Inflation has not gone up.

حکمران دشمن کے سامنے جھک گے ہے۔
The rules has bent down before the enemy.

منظور نور کی حالت محسوس کر چکا ہے۔
Manzoor has realized the situation of Noor.

ہمارا دشمن ہمیں قائل کر گیا ہے۔
Has the enemy persuaded us ?

شادی میں لوگ ناچ چکے ہیں۔
People have danced in marriage ceremony.

ہم اللہ سے مانگ چکے ہیں۔
We have begged to Allah.

میں کھانا نہیں کھا چکا ہوں۔
I have not eaten food.

کیا ہم کالج جا چکے ہیں ؟
Have we gone to the college ?

عمر بیماری کی وجہ سے ہار مان گیا ہے۔
Umar has given up due to his illness.

وہ سکول میں پڑھا چکی ہے۔
She has taught in the school.

وہ بات کر چکی ہے۔
He has talked.

پرندے ہوا میں اڑ نہیں چکے ہیں۔
The birds have not flown in the air.

دوسرے ممالک ترقی کر چکے ہیں۔
Other countries have progressed.

اقراء اپنی دوست کو منع کر گئی ہے۔
Iqra has forbidden her friend.

ہم چائے پی چکے ہیں۔
We have taken tea.

کیا کسان کھیت خرید گئے ہے ؟
Have the formers bought the fields ?

ہریرہ رو چکا ہے۔
Huraira has cried.

لائبہ نے آرٹیکل پڑھ لیا ہے۔
Laiba has read the article.

ہر کوئی نتیجہ چیک کر چکا ہے۔
Everyone has checked the result.

ٹھیکیدار عمارت تعمیر نہیں کر چکا ہے۔
The contractor has not built the building.

کیا دشمن کھیت جلا چکا ہے ؟
Has the enemy burnt the fields ?

امیر غریبوں پر ظلم کر گئے ہیں۔
The rich have exploited the poor.

وہ انٹرویو لے چکا ہے۔
He has taken the interview.

وہ سیگریٹ پی چکا ہے۔
He has smoked.

وہ روزے میں کھا چکے ہیں۔
He has eaten in fasting.

علی امجد کو دھوکہ دے گیا ہے۔
Ali has cheated with Amjad.

اسلم ٹائمز میں کام کر چکا ہے۔
Aslam has worked in Times.

وہ رموز اوقاف پر دھیان دے چکا ہے۔
He has focused on punctuation.

سارہ ڈراما دیکھ چکی ہے۔
Sara has watched drama.

خشک پتا نیچے گر گیا ہیں۔
Dry leaf has fallen down.

وکیل سب کو اگاہ کر چکا ہے۔
The lawyer has informed everyone.

کرٹز کھائی میں گر گیا ہے۔
Kurtz has fallen into the ditch.

نازش پڑھائی کی تمنا کر چکی ہے۔
Nazish has yearned for study.

مالی پودوں کو پانی دے چکا ہے۔
The gardener has watered the plants.

ہوا دوسری گیسوں کو جذب کر گئی ہے۔
The air has absorbed other gasses.

لڑکی کھڑکی کھول چکی ہے۔
The girl has opened the window.

عفان بالوں کو تراش چکا ہے۔
Afaan has trimmed the hair.

آپ کچھ چھپا چکے ہیں۔
You have hidden something.

وہ اسے پیسے دے چکا ہے۔
He has given him money.

وہ سیب کاٹ چکا ہے۔
He has cutt the apple.

فوج قانون توڑ گئی ہے۔
Army have breached the laws.


گائے دودھ دے چکی ہے۔
The cow has given the milk.

ایمن صحیح سلامت گھر پہنچ گئی ہے۔
Aimen has reached home safe and sound.

ہم سوال کا جواب دے چکے ہیں۔
We have given the answer of question.

دوائی اثر کر چکی ہے۔
The medicine has affected.

علیشہ سب کچھ سن گئی ہے۔
Alisha has listened to everything.

وہ پوچا لگا چکی ہے۔
She has moped.

وہ وعدہ توڑ چکا ہے۔
He has broken the promise.

مزدور سو گئے ہیں۔
The labourers have slept.

محنتی لوگ محنت کر گئے ہیں۔
Industrious people have hard worked.

کاشان بابر پر تنقید کر چکا ہے۔
Kashan has criticized on Babar.

جہاز پانی میں ڈوب گیا ہے۔
The ship has sunk in the water.

زید کھانا کھا گیا ہے۔
Zaid has eaten food.

مقدس انفارمیشن اکٹھا کر چکی ہے۔
Muqaddas has collected the information.

عنصر رو چکا ہے۔
Ansar has wept.

چائینہ کھلونے بنا چکا ہے۔
China has made toys.

گھٹیا لوگ ہمیں استعمال کر گئے ہیں۔
Cheap people have used us.

سلیم امتحان دے چکا ہے۔
Saleem has taken exam.

علی کالج میں کام کر چکا ہے۔
Ali has worked in college.

رجم حاشیہ پسند کر چکا ہے۔
Rajam has liked the marjin.

پاکستان اشیاء بیچ گیا ہے۔
Pakistan has sold the goods.

ماہیگیر دریا میں تیر چکا ہے۔
The fisherman has swum in the river.

حنا لوشن پیک کر چکی ہے۔
Hina has packed the lotion.

سورج مغرب سے غروب ہو گیا ہے۔
The sun has set from west.

اسامہ کمپیوٹر چلا چکا ہے۔
Usama has operated the computer.

نور تصور کر چکا ہے۔
Noor gas imagined.

ڈاکٹر نے نسخہ لکھ لیا ہے۔
The doctor has written the prescription.

یو این او غلط کر گئی ہے۔
The UNO has done wrong.

وہاب کالج جوائن کر چکا ہے۔
Wahab has joined the college.

امام نے کھانس لیا ہے۔
Imam has coughed.

مہاجر پاکستان آ چکے ہیں۔
The immigrants have come to Pakistan.

جج قانون توڑ گیا ہے۔
The judge has breached the law.

حماد نے کھیل لیا ہے۔
Hamad has played.

سب لوگ جھوٹ بول گئے ہیں۔
All of the people have told a lie.

موبائل ہر بات نوٹ کر چکی ہے۔
The mobile phone has noticed everything.

رحیم خوشی خوشی پیسہ خرچ کر گیا ہے۔
Raheem has spent money happily.

گاڑی جانوروں کو کچل گئی ہے۔
The car has crushed the animals.

وہ نہیں مان چکی ہے۔
He has not accepted.

ابرار انڈیا کی سیر کر چکا ہے۔
Abrar has visited India.

صائم کرکٹ کھیل چکا ہے۔
Saim has played cricket.

میرا بھائی بہت کچھ سیکھ گیا ہے۔
My brother has learned many things.

فہیم دروازہ کھول چکا ہے۔
Faheem has opened the door.

مزمل پیسہ لگا چکا ہے۔
Muzammil has investigated the money.

معین مسجد سجا چکا ہے۔
Moeen has adorned the mosque.

آخر کار وہ تھک گیا ہے۔
Finally, he has tired.

انور منتیں کر چکا ہے۔
Anwar has implored.

میرے پیپر آ گے ہیں۔
My exams have come.

ثنا نقشہ بنا چکی ہے۔
Sana has made the map.

وہ غسل کر چکا ہے۔
He has bathed.

دیو قامت جانور سب کو مار گیا ہے۔
The giant animal has killed everyone.

ٹاور پیغام بھیج چکا ہے۔
The tower has sent the message.

وہ موبائل پر کام کر چکا ہے۔
He has worked on mobile phone.

سچے لوگ عمل کر چکے ہیں۔
True people have acted upon.

جھوٹے صرف باتیں کر گئے ہیں۔
The liars have just talked.

اقصی پنسل پھینک گئی ہے۔
Aqsa has thrown the pencil.

آمنہ کتاب تلاش کر چکی ہے۔
Amina has found out the book.

سہیل گیند تلاش کر چکا ہے۔
Sohail has found the ball.

وہ اس پر سوچ چکا ہے۔
He has thought over this.

سامیہ تنہائی سے ڈر گئی ہے۔
Samia has scared of loneliness.

برادری نے فیصلہ کر لیا ہے۔
Community has decided.

عامر واضح اعلان کر چکا ہے۔
Amir has announced clearly.

مریض فرش پر مرا ہے۔
The patient has died on the floor.

ریحان گاڑی چلا چکا ہے۔
Rehaan has driven the car.

وہ تفصیل سے بیان کر چکا ہے۔
He has explained in detail.

پولیس مجرم کا پیچھا کر چکی ہے۔
Police has followed the criminal.

وہ دوڑ میں حصہ لے چکا ہیں۔
He has participated in running.

کوا پانی کے لئے ترس گیا ہے۔
The crow has craved for water.

انڈیا سری لنکا گیا ہے۔
India has gone to Sri Lanka.

وہ ہر چیز کا ادراک کر گیا ہے۔
He has perceived everything.

وہ گانے سن چکا ہے۔
He has listened to music.

کتا بھونک چکا ہے۔
The dog has barked.

سرخ پھول کھل چکے ہیں۔
The red flowers have blossomed.

منیجر لوگوں کی قربانی دے چکا ہے۔
The manager has sacrificed the people.

عوام ہاتھی کے دانت لوٹ گئی ہے۔
People have looted ivory.

حسن موٹر سائیکل چلا چکا ہے۔
Hassan has ridden the motorcycle.

پادری سچ بول چکا ہے ہے۔
The priest has spoken the truth.

وسیم نے گاڑی کو سجا لیا ہے۔
Waseem has adorned the car.

اجنبی کمرے میں داخل ہو گیا ہے۔
The stranger has entered in the room.

اللہ نے صلہ دے دیا ہے۔
Allah has given the reward.

ایثار خاص نقطے کو دیکھ چکا ہے۔
Asar has looked at the specific point.

جاہل لوگ لڑ گے ہیں۔
Ignorant people have fought.

ماں نے کچھ پیسے بچا لئے ہیں۔
The mother has saved some money.

وہ حج پر چلا گیا ہے۔
He has gone to pilgrimage.

ارم ابن کو پرکھ چکی ہے۔
Iram has seen Iban.

طالب علم مشکلات کا سامنا کر چکے ہیں۔
The students have faced difficulties.

واجد نے گاڑی چلا لی ہے.
Wajid has driven the car.

وہ لاٹھیاں پھینک چکے ہیں۔
They have thrown the staves.

نازش برتن دھو چکی ہے۔
Nazish has washed the dishes.

فاریہ نے کھانا پکا لیا ہے۔
Faria has cooked the food.

دوست اکٹھے فلم دیکھ چکے ہیں۔
The friends have watched the movie together.

میرا گھوڑا ناچ چکا ہے۔
My horse has danced.

لوگ قرض لے گئے ہیں۔
People have taken loans.

لوگ مجھ پر ہنس چکے ہیں۔
People have laughed at me.

دانش اپنے بھائی کو مار گیا ہے۔
Danish has beaten his brother.

مستری غلط پیمائش کر چکا ہے۔
The mason has measured wrongly.

دشمن اپنے ہتھیار بیچ چکا ہے۔
The enemy has sold his weapons.

رابی نے دودھ ابال لیا ہے۔
Rabi has boiled the milk.

امجد امرود بیچ چکا ہے۔
Amjad has sold guava.

کبوتر گانا گا کا ہے۔
The pigeon has sing the song.

وہ پہاڑ پر چڑھ چکا ہے۔
He has climbed on the mountain.

تیز بارش ہو گئی ہے۔
It has rained cats and dogs.

منا نئے جوتے خرید چکا ہے۔
Munna has baught new shoes.

رئیس نے پیسے بھیج دئیے ہیں۔
Raees has sent the money .

اکرم مشکل کام کر گیا ہے۔
Akram has done a difficult work.

عقاب آسمان میں اڑ چکا ہے۔
The falcon has flown in the sky.

وقت ایک دم بدل گیا ہے۔
The time has changed quickly.

میڈیا مجھ سے بات کر چکی ہے۔
Media has talked to me.

لیاقت سب کچھ دیکھ چکا ہے۔
Liaqat has watched everything.

سائرہ خوبصورت لکھ چکی ہے۔
Saira has written beautifully.

حکومت بھیک مانگ چکی ہے۔
The government have begged.

طارق کھانا تقسیم کر چکا ہے۔
Tariq has distributed the food.

قیدی جیل سے بھاگ گیا ہے۔
The prisoner has fled from the cell.

باسط ٹی وی صاف کر چکا ہے۔
Basit has cleaned T.V.

پرندے چہچہا چکے ہیں۔
The birds have chirped.

استاد نے درخواست قبول کر لی ہے۔
The teacher has approved the application.

عام عوام پارک میں جا چکی ہے۔
Common people have gone to the park.

لوگ بس تباہ کر چکے ہیں۔
People have destroyed the bus.

نواز پچھتا چکا ہے۔
Nawaz has repented.

استاد اپنے شاگرد کو سزا دے چکا ہے۔
The teacher has punished his students.

ایڈیسن بلب بنا گیا ہے۔
Edison has made the bulb.

مانور شادی میں لطف اندوز ہو گئی ہے۔
Mahnoor has enjoyed in marriage ceremony.

عدالت علی کو معاف کر چکی ہے۔
The court has forgiven Ali.

چور پیسے چھین گیا ہے۔
The thief has snatched the money.

انیس آگ بجا چکا ہے۔
Anees has extinguished the fire.

نوید لڑ چکا ہے۔
Naveee has fighting.

وہ نیا ڈبہ کھول چکا ہے۔
He has opened the new box.

وہ امتحان لے چکا ہے۔
He has given the exam.

امریکہ دہشتگردوں کو مار چکا ہے۔
America has killed the terrorists.

میں نے کپڑے اتار لئے ہوں۔
I have taken off my clothes.

سمیع خبر پھیلا چکا ہے۔
Sami has spreaded the news.

زرات ہوا میں گھوم چکے ہیں۔
The particles have revolved in the air.

نجم موبائل استعمال کر چکا ہے۔
Najam has used the mobile phone.

نقیب جھوٹ بول چکا ہے۔
Naqeeb has told a lie.

استاد اچھی طرح بیان کر چکا ہے۔
The teacher has explained very well.

کوریا آمریکہ پر حملہ کر گیا ہے۔
Korea has attacked America.

دلشاد میٹنگ ملتوی کر گیا ہے۔
Dilshad has annulled the meeting.

ہم اچھے برتاؤ کی امید کر چکے ہیں۔
We have expected for a good behavior.

میں بار بار کوشش کر چکا ہوں۔
I have tried time and again.

جاوید فیصلہ کر چکا ہے۔
Javed has decided.

غریب بھوک سے مر گیا ہے۔
The poor has died of hunger.

ملازم دو کام کر چکا ہے۔
The servant has done two pieces of work.

ثانیہ مسکرا گئی ہے۔
Sania has smiled.

عاصم سب کے سامنے اظہار کر چکا ہے۔
Asim has poured out in front of all.

میں نے کہانی لکھ لی ہے۔
I hae written the story.

بچہ بھوک محسوس کر چکا ہے۔
The child has felt the hungry.

دونوں ماجد پر ہنس چکے ہیں۔
Both have laughed at Majid.

گاہک پھل چوری کر چکا ہیں۔
The costumer has stolen the fruit.

سعد انگلش سیکھ چکا ہے۔
Saad has learned English.

کھلاڑی اپنے جوتے اتار چکے ہیں۔
The players have taken off their shoes.

ندیم کھانا پکا چکا ہے۔
Nadeem has cooked the food.

ماں بچے کو دودھ پلا چکی ہے۔
The mother has feeded the child.

عاقب نے الفاظ دہرا لئے ہے۔
Aqib has revised the words.

زارہ سبق دہرا چکی ہے۔
Zara has revised the lesson.

نوید سچ بول چکا ہے۔
Naveed has told the truth.

مخالفین میرا چیلنج قبول کر گئے ہیں۔
Opponents have accepted my challenge.

سبزی کی قیمت بڑھ گئی ہے۔
The price of vegetables has increased.

کابینہ انگلینڈ جا چکی ہے۔
The cabinet has gone to England.

بزدل ہار مان چکے ہیں۔
Cowards have accepted defeat.

شہاب پیسہ کما چکا ہے۔
Shahaab has earned money.

وہ آہستہ آہستہ چل چکی ہے۔
She has walked slowly.

عائشہ آوارہ گردی کر چکی ہے.
Aysha has wandered.

نیاز قبر کھود چکا ہے۔
Niaz has digged the grave.

وزراء رشوت لے چکے ہیں۔
The ministers have taken bribe.

لوگ مجھ سے پیار کر چکے ہیں۔
People have loved me.

ماں پیاز چھیل چکی ہے۔
The mother has peeled the onion.

چور ایک غلطی کر چکا ہے۔
The thief has made a mistake.

عثمان فون سن چکا ہے۔
Usman has listened to the phone.

میں بہت لطف اندوز ہو چکا ہوں۔
I have enjoyed very much.

آصف کپڑے پہن چکا ہے۔
Asif has putt on the clothes.

عارف وقار سے ملنے چلا گیا ہے۔
Arif has called on Waqar.

ملازم اپنا کام مکمل کر چکے ہیں۔
The servants hae completed their work.

سجاد مشین چلا چکا ہے۔
Sajaad has operated the machine.

Related Articles

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Back to top button